اردو | NEWS

قتل ہونے،پاگل ثابت کئےجانے کاڈرتھا:امریکی گلوکارہ برٹنی سپیئرز

امریکا(شوبزڈیسک)امریکی گلوکارہ واداکارہ39 سالہ برٹنی سپیئرز نے اپنی سرپرستی ختم کروانے کے کیس میں عدالت میں دیئے گئے بیان میں کہا ہے کہ انہیں کئی سال تک یہ خوف رہا کہ انہیں یا تو قتل کردیا جائے گا یا پھر یہ ثابت کیا جائے گا کہ وہ پاگل ہیں۔
خبر رساں ادارے رائٹرزکے مطابق والد کی سرپرستی ختم کرنے کے کیس کی 14 جولائی کو ہونے والی سماعت میں برٹنی سپیئرز نے ایک ہی مہینے میں دوسری بار فون کے ذریعے عدالت میں اپنا بیان ریکارڈ کروایا۔
مذکورہ بیان سے قبل گزشتہ ماہ جون کے اختتام پر برٹنی سپیئرز نے 13 سال میں پہلی بار مذکورہ معاملے پر عدالت میں فون کے ذریعے اپنا بیان ریکارڈ کروایا تھا۔
ایک ہی مہینے میں دوسری بار عدالت میں ریکارڈ کروائے گئے بیان میں برٹنی سپیئرز نے ایک بار پھر والد پر سنگین الزامات لگائے اور عدالت سے مطالبہ کیا کہ والد کی سرپرستی فوری طور پر ختم کی جائے۔
اداکارہ نے عدالت کو بتایا کہ سرپرستی کے ابتدائی سالوں میں انہیں شدید احساس ہوتا تھا کہ والد انہیں قتل کروا دیں گے اور پھر آگے چل کر انہیں یہ احساس ہونے لگا کہ وہ انہیں پاگل ثابت کریں گے۔
انہوں نے والد کی سرپرستی کو ایک بار پھر توہین آمیز اور پرتشدد قرار دیا اور مطالبہ کیا کہ انہیں فوری طور پر آزاد کرکے اپنی مرضی کے مطابق زندگی گزارنے دی جائے۔
برٹنی سپیئرزکے والد جیمی سپیئرز 2008 سے اداکارہ کے (conservator) یعنی قانونی طور پر سرپرست ہیں اور اداکارہ گزشتہ دو سال سے والد کی مذکورہ حیثیت ختم کروانے کے لئے کوشاں ہیں۔
برٹنی سپیئرز کے والد کو امریکی عدالت نے 2008 میں اس وقت گلوکارہ کاسرپرست مقرر کیا تھا جب اداکارہ کی ذہنی حالت ٹھیک نہیں تھی اور وہ اپنے فیصلے بھی کرنے کی اہل نہیں تھیں۔
گزشتہ 13 سال سے والد ہی اداکارہ کے تمام معاملات دیکھ رہے ہیں اور برٹنی سپیئرز والد کی اجازت کے بغیر کوئی کام نہیں کر سکتیں، یہاں تک کہ وہ کسی شو میں پرفارمنس یا کسی مرد سے تعلقات بھی اپنے والد کی مرضی سے استوار کرنے کی پابند ہیں۔

ویڈیوز

پیرس میں سجادیسی فیشن شو
ننھے مہمانوں سے رونقیں بحال
سرکاری ملازمین بھی احتجاج کیلئے نکل پڑے
میجرکی فروٹ چاٹ ہوگئی کامیاب