دنیا میں ہر دسواں شخص کورونا کا شکار؟؟؟

2 weeks ago


آنے والے دن ’سخت‘ ہوں گے:ڈبلیوایچ اوکاانتباہ جاری

عالمی ادارہ صحت (ڈبلیوایچ او) کا کہنا ہے کہ دنیا میں تقریباً ہر دس میں سے ایک شخص کورونا وائرس کے انفیکشن کا شکار ہو سکتا ہے اور ڈبلیوایچ او نے متنبہ کیا کہ آنے والے دن ’سخت‘ ہوں گے۔عالمی ادارہ صحت نے پیر کے روز بتایا کہ اس کے 'انتہائی محتاط اندازے‘ کے مطابق دنیا میں ہر دس میں سے ایک شخص کورونا وائرس سے متاثر ہو سکتا ہے۔یہ تعداد موجودہ مصدقہ کیسز کی تعداد سے بیس گنا زیادہ ہے۔ اب تک ساڑھے تین کروڑ سے زیادہ افراد کووڈ 19 سے متاثر ہو چکے ہیں۔


ڈبلیو ایچ او کے ایمرجنسی آپریشنز کے سربراہ مائیک ریان نے کہا ہمارے موجودہ انتہائی محتاط اندازوں سے پتہ چلتا ہے کہ پوری دنیا کی آبادی کا تقریباً 10فیصد اس وائرس سے متاثر ہو سکتا ہے۔ڈاکٹر ریان کا مزید کہنا تھایہ مختلف ملکوں میں مختلف ہو گا، شہروں اور گائوں میں مختلف ہو گا، مختلف گروپوں میں الگ الگ ہو گا لیکن یہ حقیقت ہے کہ دنیا کی ایک بڑی اکثریت کے لیے اس کا خطرہ برقرار رہے گا۔ ان کا مزید کہنا تھا ”ہم ایک مشکل دور کی طرف بڑھ رہے ہیں۔ یہ بیماری مسلسل پھیلتی جارہی ہے۔


ڈاکٹر ریان نے ان خیالات کا اظہار کووڈ 19 پر خصوصی توجہ مرکوز کرنے والی ڈبلیو ایچ او کی 34 رکنی ایگزیکٹو بورڈ کی میٹنگ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے بورڈ سے کہا کہ یہ وبا اب جنوب مشرقی ایشیا کے مختلف حصوں میں پھیل رہی ہے جبکہ یورپ کے کئی حصوں اور مشرقی بحیرہ روم کے خطے میں بھی اس وبامیں اضافہ ہو رہا ہے۔یورپ میں حکام کو خدشہ ہے کہ موسم بہار کے دوران ہسپتالوں میں ایک بار پھر اسی طرح کے بھیانک مناظر دیکھنے کو مل سکتے ہیں جیسا کہ اٹلی اورسپین جیسے ملکوں میں وائرس کی وجہ سے ہسپتالوں کے آئی سی یو یونٹوں میں دیکھنے کو ملے تھے۔سپین کے بعض حصوں میںہسپتالوں میں ایک بار پھر مریضوں کی بڑی تعداد کی آمد کی وجہ سے حکام پریشانی میں مبتلا ہو گئے ہیں۔


دریں اثنا روس میں پیر کے روز ایک بار پھر کورونا کے نئے کیسز میں اسی طرح کا اضافہ دیکھا گیا جیسا کہ مئی میں دیکھا گیا تھاتاہم فی الحال اس نے سخت لاک ڈائون کے اقدامات دوبار نافذ نہیں کئے ہیں۔ڈی ڈبلیوکے مطابق دوسری طر ف بھارت میں اس وقت دنیا میں یومیہ سب سے زیادہ نئے کیسز درج ہو رہے ہیں۔ بھارت میں کورونا سے ہلاک ہونے والوں کی تعداد ایک لاکھ سے تجاوز کر چکی ہے۔

شیئر کریں