سوشل میڈیاپرعدلیہ کی کردارکشی کی مہم جاری

1 week ago


انتظامیہ کوعدالتی فیصلے نہ ماننے پراکسایاجارہاہے

سوشل میڈیا پر بعض عناصر پاک فوج کو عدلیہ کے خلاف بغاوت پر اکسا رہے ہیں۔

ٹویٹر، فیس بک اور وٹس ایپ کے مختلف گروپوں میں خود کو محب وطن، ریٹائر فوجی افسر اور تحریک انصاف کے حامی قرار دینے والے عناصر پاک فوج اور سول انتظامیہ سے مطالبہ کر رہے ہیں کہ عدلیہ کے کسی بھی حکم کو نہ مانا جائے اور ججوں کے گھروں کا گھیرائو کیا جائے اور ایک صدارتی حکمنامے کے ذریعے سپریم جوڈیشل کونسل کو ختم کر دیا جائے۔

یہ بھی تجویزدی جا رہی ہے کہ وفاقی حکومت جسٹس فائز عیسیٰ کے حوالے سے آنے والے سپریم کورٹ کے تفصیلی فیصلے کا انتظار کرے اور اس کے بعد اس فیصلے کے خلاف سپریم کورٹ کے سترہ ججوں پر مشتمل فل بینچ بنانے کا مطالبہ کیا جائے۔

سترہ ججوں میں حکومت کے موقف کے حامی ججوں کی تعداد زیادہ ہو جائے گی اور اس طرح مستقبل میں جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کے چیف جسٹس آف پاکستان بننے کے امکانات کو مسدود کیا جا سکے گا۔

ان عناصر کو چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ کی میڈیا کے نمائندوں سے مبینہ ملاقات پر بھی شدید اعتراض ہے اور وہ آرمی چیف کو میڈیا کو غیر ضروری اہمیت دینے پر بھی قصور وار قرار دے رہے ہیں۔

شیئر کریں



یہ بھی پڑھیے


سوشل میڈیاپرعدلیہ کی کردارکشی کی مہم جاری