نواز شریف کے وارنٹس گرفتاری کامعاملہ،پاکستانی ہائی کمیشن کابیان جمع

1 week ago


وارنٹ گرفتاری کی بائی ہینڈ تعمیل نہیں کرائی جاسکی

مسلم لیگ کے قائداورسابق وزیراعظم نواز شریف کے وارنٹس گرفتاری کی تعمیل کے سلسلے میں پاکستانی ہائی کمیشن کے لندن کے افسران کا تحریری بیان عدالت میں جمع کرادیاگیا۔پاکستانی ہائی کمیشن لندن کے فرسٹ سیکرٹری دلدار علی ابڑو اور ہائی کمیشن کے قونصلر اتاشی راﺅ عبدالحنان کی جانب سے لکھا گیا تحریری بیان سامنے آیاہے۔


قونصلر اتاشی نے بیان میں لکھاہے کہ لندن میں نواز شریف کی رہائش پر 17 ستمبر کو شام 6 بجکر 35 منٹ پر وارنٹ کی تعمیل کے لئے گیاتھا۔نواز شریف کے ذاتی ملازم محمد یعقوب نے وارنٹ گرفتار ی وصول کرنے سے انکار کردیا لہٰذا نواز شریف کے وارنٹ گرفتاری کی بائی ہینڈ تعمیل نہیں کرائی جاسکی۔

اپنے بیان میں سیکرٹری دلدار ابڑو نے بتایا کہ نواز شریف کے بیٹوں کے سیکرٹری وقار احمد نے مجھے کال کی اور کہا کہ وہ نواز شریف کے وارنٹ گرفتاری وصول کریں گے۔ وقار احمد کے مطابق وہ نواز شریف کے پارک لین لندن کی رہائش گاہ پر وارنٹ وصول کریں گے جس پر ہائی کمیشن نے مجھے نواز شریف کے وارنٹس اس پتہ پر تعمیل کرانے کی اجازت دی۔

انہوں نے کہا اس کے بعد وقار احمد کے ساتھ اس بات پر اتفاق ہوا کہ وہ 23 ستمبر کو دن 11 بجے وارنٹس وصول کریں گے۔ قونصلر اتاشی راﺅ عبدالحنان وارنٹس کی تعمیل کے لئے آئیں گے تاہم برطانیہ کے وقت کے مطابق 10 بجکر 20 منٹ پر وقار نے مجھے کال کرکے وارنٹس وصولی سے معذرت کی۔

یادرہے 15 ستمبر کو اسلام آباد ہائی کورٹ نے العزیزیہ ریفرنس میں احتساب عدالت کے فیصلے کے خلاف دائر اپیلوں کی سماعت سے قبل سابق وزیراعظم نواز شریف کی حاضری سے استثنیٰ کی درخواست مسترد کرتے ہوئے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کئے تھے۔

اسلام آباد ہائی کورٹ کے اسسٹنٹ رجسٹرار نے سیکرٹری خارجہ کو ہدایت کی تھی کہ نواز شریف کی 22 ستمبر کو صبح 11 بجے عدالت میں حاضری یقینی بنانے کے لئے برطانیہ میں پاکستانی ہائی کمیشن کے ذریعے وارنٹ بھیجے جائیں اور نواز شریف کو عدالت کی جانب سے مقرر کردہ تاریخ میں پیش کیا جائے۔اس حوالے سے برطانوی حکومت نے وارنٹ گرفتاری کی تعمیل کرانے سے انکارکیاتھا۔

شیئر کریں



یہ بھی پڑھیے


نواز شریف کے وارنٹس گرفتاری کامعاملہ،پاکستانی ہائی کمیشن کابیان جمع