اردو | NEWS

افغان فوج کی درخواست پرطالبان پر بمباری تیز کر دی: امریکی جنرل

کابل(نیوزڈیسک)امریکاکے افغان مشن کے سربراہ جنرل فرینک میکنزی نے کہاہے کہ افغان فورسز کی درخواست پر طالبان کے خلاف بمباری تیز کردی ہے۔
میڈیا رپورٹ کے مطابق کابل میں اشرف غنی سے ملاقات کے بعد پریس کانفرنس کرتے ہوئے جنرل میکنزی نے کہاکہ طالبان نے حملے جاری رکھے تو پھر امریکا بھی بمباری میں تیزی کوبرقرار رکھے گا۔ادھرقندھار پر قبضے کیلئے افغان فوج اور طالبان میں شدیدلڑائی کا سلسلہ جاری ہے،22ہزار خاندان علاقے سے نقل مکانی کرگئے۔
ہلمند کے علاقے گریشک میں افغان فضائیہ نے ہسپتال پر بمباری کردی جس سے ہسپتال کی بیشتر عمارت تباہ ہوگئی ۔کابل میں7سکیورٹی اہلکاروں کو گولی ماردی گئی ۔ضلع شکر درہ میں 5 سرکاری ملازمین کو گولی ماری گئی۔
افغان فورسز نے عید کے موقع پر صدارتی محل پر ہونے والے راکٹ حملوں میں ملوث چار طالبان جنگجوئوں کو گرفتار کرنے کا دعویٰ کیاہے۔حملے کی ذمہ داری داعش نے قبول کی تھی۔طالبان نے کنڑ کے پاکستان سے ملحقہ ضلع نری پر قبضہ کرلیا۔
ادھرامریکی وزیر دفاع لائیڈ آسٹن نے کہاہے کہ افغانستان میں حکومتی دستوں کا پہلا کام طالبان عسکریت پسندوں کی پیش قدمی روکنا ہے اور طالبان کی یلغار کی رفتار میں کمی کے بعد ہی ان کے زیر قبضہ علاقے آزاد کرانے کی کوشش کی جانی چاہئے۔

ویڈیوز

پیرس میں سجادیسی فیشن شو
ننھے مہمانوں سے رونقیں بحال
سرکاری ملازمین بھی احتجاج کیلئے نکل پڑے
میجرکی فروٹ چاٹ ہوگئی کامیاب