اردو | NEWS

کنگنا مودی حکومت کے متنازع زرعی قوانین واپس لینے کے فیصلے پر ناخوش

ممبئی(شوبزڈیسک)بالی ووڈاداکارہ کنگنارناوت نے مودی حکومت کے متنازع زرعی قوانین واپس لینے کے فیصلے پر مایوسی کا اظہار کیا ہے۔ویسے تو کنگنا رناوت کا بنیادی کام اداکاری کرناہے لیکن اکثر وہ اداکاری سے زیادہ دیگر معاملات پر اپنی رائے دیتی ہوئی نظر آتی ہیں۔ اب چاہے وہ حکومتی معاملات ہوں یاپاک بھارت معاملات کنگنا ہرجگہ بیان دینا ضروری سمجھتی ہیں جس کی وجہ سے اکثر تنقید کا نشانہ بھی بنتی ہیں۔
حال ہی میں انہوں نے مودی حکومت کے متنازع زرعی قوانین کوواپس لینے کے فیصلے پر اپنی رائے دیتے ہوئے مایوسی کا اظہار کیا ہے۔ کنگنانے انسٹاگرام سٹوری پر ایک سوشل میڈیا صارف کی پوسٹ شیئرکی جس میں مودی حکومت کے متنازع زرعی قوانین کو واپس لینے کے فیصلے کو سراہتے ہوئے کہا گیا تھا’’ ثابت ہوا، سٹریٹ پاور واحد طاقت ہے جو اہمیت رکھتی ہے‘‘۔
کنگنانے اس صارف کی پوسٹ پر ردعمل دیتے ہوئے متنازع زرعی قوانین سےمتعلق حکومتی فیصلےکوافسوسناک، شرمناک اور ناانصافی پر مبنی قرار دیا اور کہاپارلیمنٹ میں منتخب حکومت نہیں بلکہ سڑکوں پرلوگ قوانین بنانا شروع کردیں تو یہ بھی جہادی قوم ہے۔ ان تمام لوگوں کو مبارک جو ایسا چاہتے تھے۔واضح رہےکہ مودی حکومت نے گزشتہ ایک سال سے ملک میں جاری کسانوں کے احتجاج کے آگے سر جھکاتے ہوئے زرعی اصلاحات کے نام پر منظور متنازع قوانین کو واپس لینے کا اعلان کیا ہے۔

ویڈیوز

پیرس میں سجادیسی فیشن شو
ننھے مہمانوں سے رونقیں بحال
سرکاری ملازمین بھی احتجاج کیلئے نکل پڑے
میجرکی فروٹ چاٹ ہوگئی کامیاب