کورونا:عید شاپنگ کا رزلٹ 10 روز بعد آئے گا

6 months ago


اب جو مریض آرہے ہیں وہ زیادہ سیریس ہیں،وی سی یوایچ ایس
گذشتہ روز یونیورسٹی آف سرگودہا کے سنڈیکیٹ ہال میں سرگودہا میڈیکل کالج کے ڈاکٹرز کے ساتھ ایک خصوصی اجلاس منعقد کیاگیا اور ٹرائل پروٹیکٹ کیلئے پہلی سائٹ وزٹ کی گئی۔ اس موقع پر وائس چانسلر سرگودہا یونیورسٹی ڈاکٹر اشتیاق احمد،پرنسپل ڈاکٹر حمیرا اکرم‘ رجسٹرار ڈاکٹر فہد اللہ‘ایم ایس ڈی ایچ کیو ٹیچنگ ہسپتال ڈاکٹر غلام شبیر و دیگر بھی موجود تھے۔ وائس چانسلر یو ایچ ایس پروفیسر ڈاکٹر جاوید اکرم نے بتایا کہ سرگودہا میں ٹرائل پروٹیکٹ کیلئے میڈیکل کالج کے پروفیسرز اور ٹیچنگ ہسپتال کے ڈاکٹرز مل کر تحقیق کریں گے اور کورونا وائرس کے بدلتے ہوئے ری ایکشن اور مریضوں پر اس کے اثرات کو جانچا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ عید شاپنگ کی ٹرانسمیشن کا رزلٹ 10 روز بعد آئے گا تاہم اب جو مریض آرہے ہیں وہ زیادہ سیریس ہیں اور زیادہ تر وبائی امراض کے پھیلائو میں ایسا ہی ہوتا ہے مگر اب ہمیں میڈیکل کیپسٹی میں اضافہ کرنے کی ضرورت ہے کیونکہ عید کے بعد ہسپتالوں میں رش بڑھنے کی توقع ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں کورونا وائرس کے مریضوں کا علاج مختلف دواو¿ں سے کیا جارہا ہے جس میں اینٹی وائرل‘ اینٹی بائیوٹیک جبکہ اینٹی باڈیز ماڈل بھی شامل ہے۔ پروفیسر ڈاکٹر ڈاکٹر اکرم نے کہا کہ پلازمہ تھراپی کا تجربہ کامیاب رہا ہے اور ہر ڈسٹرکٹ ہسپتال میں کورونا سے صحتیاب مریضوں کا پلازمہ ضرور لیا جائے تاکہ اس سے دیگر انسانی زندگیاں بچائی جاسکیں تاہم اس تھراپی کو ایسے مریضوں پر استعمال کیا جائے جو پہلے کسی اور بیماری میں مبتلا نہ ہوں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں ویکسین بنانے کے سلسلے میں بہت تھوڑا کام ہورہا ہے تاہم آکسفورڈ اور چینی یونیورسٹیز کے اشتراک سے یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز اس پر کام کررہی ہے اور کنسورشیئم کے تحت مقامی سطح پر 9یونیورسٹیوں سے ملکر بھی کام کر رہے ہیں۔ پروفیسر ڈاکٹر جاوید اکرم نے اس بات پر زور دیا کہ ڈاکٹرز کو مکمل ٹریننگ دی جائے اور جو ڈاکٹرز فرنٹ لائن پر کام کررہے ہیں ان کو زیادہ احتیاط کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم کلونجی سے بھی کورونا وائرس کے مریضوں کے علاج میں پیش رفت پر تحقیق کررہے ہیں اور امید ہے کہ اس بیماری کو جڑ سے پکڑ اجائے گا کیونکہ اب اس وائرس کے ساتھ رہنا پڑے گا جس کا واحد طریقہ احتیاط اور سماجی دوری ہے۔ اس موقع پر پرنسپل ڈاکٹر حمیرا اکرم نے بریفنگ میں بتایا کہ سرگودھا میڈیکل کالج میں 80 بستروں پر مشتمل فیلڈ ہسپتال قائم کیا گیاہے جبکہ میڈیکل اورزرعی کالجز میں قرنطینیہ سنٹر زبھی قائم کئے گئے ہیں اور اب ٹرائل پروٹیکٹ کے تحت سرگودہا میں کورونا وائرس کے مریضوں کو رجسٹر کرنے کے عمل کا آغاز کردیا جائے گا۔ میڈیکل سپیشلسٹ ڈاکٹر سیف اللہ گورائیہ نے بتایا کہ سرگودہا میں کورونا کے مریضوں کو مختلف ادویہ سے زیادہ افاقہ ہوا ہے اور یہاں اموات کی شرح کم ہے یہ مشاہدات وتجربات دیگر یونیورسٹیوں سے شیئر بھی کئے جائیں گے تاہم لاک ڈاو¿ن میں نرمی کے بعد وائرس کا ردعمل شدید ہے اور اب مریض تشویشناک حالت میں آرہے ہیں جن کو فوری وینٹی لیٹر کی ضرورت پیش آرہی ہے۔ فوکل پرسن برائے کورونا ڈی ایچ کیو ٹیچنگ ہسپتال ڈاکٹر سکندر حیات وڑائچ نے کہا کہ پہلے دوماہ میں سرگودہا میں مریضوں کی فوری صحت یابی دیکھنے میں آئی لیکن اب صورتحال پیچیدہ ہوتی جارہی ہے اور لوگ احتیاط کم کررہے ہیں جس کے خوفناک نتائج برآمد ہوسکتے ہیں۔ اس موقع پر دیگر ڈاکٹرز نے بھی اپنی تجاویز دیں اور اپنے تجربات و مشاہدات میٹنگ میں شیئر کئے۔ وائس چانسلر ڈاکٹر اشتیاق احمد نے کہا کہ کورونا پر تحقیق کیلئے سرگودہا یونیورسٹی کا یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز کے ساتھ الحاق خوش آئند ہے اور اس سے ہمیں کورونا وائرس کی روک تھام اور مریضوں کی جان بچانے میں مدد ملے گی۔ اس موقع پر یو ایچ ایس کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر جاوید اکر م نے ٹرائل پروٹیکٹ کے تحت سرگودہا میں منتخب کئے گئے ڈاکٹرز میں وائٹ کوٹ بھی تقسیم کئے۔
شیئر کریں



یہ بھی پڑھیے


ماحول کے لئے نقصان دہ گیسوں کا نیا ریکارڈ
چین نے سکس(6) جی ٹیکنالوجی ٹیسٹ کرنے کیلئے سیارہ خلاءمیں بھیج دیا
ناساچاندپر4جی ٹاورزلگانے کیلئے نوکیاکی مددکرے گا

جاپان میں کوروناوائرس ختم کرنے والاآلہ تیار

2 months ago


قیمت 2 ہزار 860 ڈالر، صرف صحت کے ادارے آڈر دے سکتے ہیں

روشنی کے آلات کی جاپانی کمپنی اوشیو نے انسان کو نقصان پہنچائے بغیر کورونا وائرس کووِڈ19 کو ختم کرنے والی الٹرا وائلٹ شعاعیں پھیلانے والا آلہ تیار کرلیا۔

کولمبیا یونیورسٹی کے تعاون سے تیار کردہ کئیر222 نامی یہ آلہ 254 نینو میٹر لہروں والی UV شعاعیں پھیلانے والے روایتی آلات کے برعکس 222 نینو میٹر UV شعاعیں پھیلاتا ہے۔انسان کو نقصان پہنچائے بغیر جراثیم کو مارنے والا یہ آلہ رش والی بسوں، ٹرینوں، لفٹوں اور آفسوں کو جراثیم سے پاک کرنے کے لئے استعمال کیا جائے گا۔
ٹی آرٹی کے مطابق کئیر 222 نامی یہ آلہ مطلوبہ جگہ کی چھت سے لٹکایا جاتا ہے اور اڑھائی میٹر تک کے فاصلے پر ہوا میں موجود جراثیم کو 7 منٹ کے اندر 99 فیصد تک ختم کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔کویوڈو خبر رساں ایجنسی کے مطابق 222 نینو میٹر UV شعاعوں کے انسانی صحت کے لئے م±ضر نہ ہونے کی غیر جانبدارانہ ٹیسٹ کے ساتھ ہیروشیما یونیورسٹی کی طرف سے تصدیق کی گئی ہے۔
3 لاکھ ین تقریباً 2 ہزار 860 ڈالر کے اور 1.2 کلوگرام وزنی کئیر 222 آلے کے لئے فی الحال صرف صحت کے اداروں کی طرف سے آڈر وصول کئے جا رہے ہیں۔



پاکستان میں کورونا سے بچائو کی ویکسن کی آزمائش شروع

2 months ago


آزمائشی مرحلے میں8 سے 10 ہزار پاکستانی ہوں گے،وفاقی وزیراسدعمر

پاکستان میں کورونا سے بچائو کی ویکسن کی آزمائش شروع ہو گئی ہے۔وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر فیصل سلطان نے اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ ویکسن کا کلینکل ٹرائل صحت کے نظام میں بہتری کے لئے بھی اہم ہے۔انہوںنے بتایا کہ ویکسین کا کلینکل ٹرائل چین کے تعاون سے شروع کیا گیاہے، دوسرے مرحلے میں 508 افراد پر ٹرائل کیا گیا۔ تیسرے مرحلے میں 8 سے 10 ہزار افراد پر ویکسن کا ٹرائل ہو گا۔

وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی اسد عمر نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ پاکستان میں کورونا ویکسین کے تیسرے مرحلے کا آزمائشی آغاز ہو گیا ہے۔ کورونا ویکسین چینی کمپنی نے تیار کی ہے، ویکسین ٹرائل میں 7 ممالک کے 40 ہزار افراد رضاکارانہ شریک ہوں گے۔انہوں نے کہا کہ آزمائشی مرحلے میں 8 سے 10 ہزار پاکستانی ہوں گے، ٹیسٹ کے ابتدائی نتائج 4 سے 6 ماہ میں متوقع ہیں۔



1939میں چھٹی کے لئے لکھی گئی درخواست برآمد

2 months ago


طالبعلم کانام راج سنگھ،تعلق سرگودھاسے تھا

سرگودھاکی تحصیل ساہی وال میں ایک گھرکی مرمت کے دوران 80سال پرانی ہاتھ سے لکھی گئی درخواست نکل آئی۔درخواست چھٹی جماعت کے طالبعلم را ج سنگھ کی طرف سے لکھی گئی ہے جس میں بیماری کی وجہ سے رخصت مانگی گئی ہے۔

مذکورہ تاریخی مکان کوحالیہ بارشوں کی وجہ سے کافی نقصان پہنچاتھااورمکان کی دیوارکاایک حصہ گر گیا تھا ۔ دیوارکی دوبارہ تعمیرکے لئے جب کام آغازکیاگیاتواس میں سے ایک صفحہ برآمدہواجس پر چھٹی کے لئے درخواست لکھی ہوئی تھی۔درخواست اس وقت کے ہیڈماسٹرگورنمنٹ ہائی سکول کے نام لکھی گئی تھی جس پر29جون1939کی تاریخ درج ہے۔