SEX روبوٹس مسائل پیداکرسکتے ہیں،محققین کاانتباہ

9 months ago


روبوٹس بنانے سے بچوں کے ساتھ زیادتی کے واقعات میں کمی آئے گی،بنانے والے کادعویٰ
امریکی محققین نے خبردارکیاہے کہ مارکیٹ میں دستیاب مصنوعی ذہانت کے حامل سیکس روبوٹس سے انفرادی طورپرلوگوں اورمجموعی طورپرمعاشروں کے لئے نفسیاتی اوراخلاقی مسائل پیداہوسکتے ہیں۔ان کاکہناہے کہ اس موضوع پرادارے تحقیقات سے گریزاں ہیں۔اس لئے اس صنعت کی کوئی نگرانی نہیں کررہا۔سائنسدانوں نے ان روبوٹس کے بے مہاراستعمال کوروکنے کی سفارش کی ہے۔ڈیوک یونیورسٹی کی ڈاکٹرکرسٹین ہینڈرن نے امریکہ کی ایسوسی ایشن برائے ترقی سائنس کے سالانہ اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ یہ بہت بڑاخطرہ ہے اسے معمولی نہیں سمجھناچاہئے۔انہوں نے کہاکہ بعض روبوٹس کواس طرح پروگرام کیاجارہاہے کہ وہ احتجاج کرسکتے ہیں اوربعض ریپ کامنظربھی پیداکرسکتے ہیں۔ ان میں سے بعض روبوٹس بالکل بچوں کی شکل کے بنائے گئے ہیں۔جاپان میں اس قسم کے روبوٹس بنانے والے ایک ڈویلپرکاکہناہے کہ وہ خودبچوں سے زیادتی کارجحان رکھتے ہیں اوران کاکہناہے کہ اس قسم کے روبوٹس بنانے سے حقیقی دنیامیں بچوں سے زیادتی کے واقعات میں کمی آئے گی ۔اب یہ سوال پیداہوتاہے کہ اس قسم کے رجحانات رکھنے والوں کیلئے اشیاءبنائی جائیں یاان لوگوں کا ذہنی علاج کیا جانا چاہئے۔متعدداقسام کے روبوٹس کے آن لائن اشتہارات جاری ہوتے ہیں ۔ایک امریکی کمپنی ریل روبوٹکس نے ایک ویڈیوجاری کی ہے کہ اس کاروبوٹ جس کانام انہوں نے ہارمنی رکھاہواہے کی قیمت8سے10ہزارڈالرہے۔یہ ایک گڑیاکی شکل کاروبوٹ ہے جوآنکھیں جھپک سکتاہے اورگردن کوگھماسکتاہے ۔گفتگوکے دوران اس کے ہونٹ بھی ہلتے ہیں۔یہ روبوٹ سکاٹش لہجے میں کہتاہے کہ اگرآپ نے اپنے پتے صحیح کھیلے توآپ کیلئے مزہ انتظارکررہاہے۔اس فرم کے بانی اورسی ای اومیک ملن نے وضاحت کرتے ہوئے کہاہے کہ ہارمنی روبوٹ اپنے مالک کے ساتھ تعلقات استوارکرنے کی صلاحیت رکھتاہے۔یہ روبوٹ آپ کے متعلق معلومات یادرکھتاہے یعنی آپ کوکیاپسندہے اورکیانہیں دوسراآپ کاتجربہ کیسارہا۔ڈی ماﺅنٹ فورٹ یونیورسٹی لے سسٹرنے روبوٹس اورمصنوعی ذہانت کی اخلاقیات اورثقافت کی پروفیسرکیتھلین رچرڈسن کاکہناہے کہ اس قسم کی مارکیٹنگ غیرقانونی قراردی جانی چاہئے۔یہ کمپنیاں کہہ رہی ہیں کہ اگرآپ کی دوستی نہیں اورزندگی کاکوئی ساتھی نہیں ہے توفکرکی کوئی بات نہیں ہم آپ کیلئے روبوٹ گرل فرینڈبناسکتے ہیں۔ان کاکہناہے کہ ایک گرل فرینڈکے ساتھ تعلقات ،شناسائی اوردوطرفہ رجحان کے بعدپیداہوتے ہیںاوریہ چیزیں آپ مشین میں پیدانہیں کرسکتے۔ پروفیسررچرڈسن نے اس قسم کی مصنوعات کے خلاف بننے والے ایک پریشرگروپ سے کہاہے کہ وہ اس قسم کے پروگرامات کی نگرانی کرے۔پریشرگروپ جودی کمپین اگینسٹ سیکس روبوٹ قائم ہواہے کا کہناہے کہ وہ پالیسی سازوں کے ساتھ مل کرکام کررہے ہیں تاکہ انسانی ساتھی کے متبادل کے طورپر روبوٹس بنائے جانے کے کام پرپابندی عائد کی جائے۔ان کاکہناہے کہ وہ مستقبل میں عورتوں کومحض ایک جنس کے طورپردیکھنے کے نظریہ کے خلاف کام کریں گے۔انہوں نے کہاکہ اگرآپ کی زندگی میں اپنے شریک حیات کے ساتھ کچھ مسائل ہیں توان کوحل کیاجاناچاہئے نہ کہ ان کے متبادل کے طورپر روبوٹ لائے جائیں۔
شیئر کریں



یہ بھی پڑھیے


ماحول کے لئے نقصان دہ گیسوں کا نیا ریکارڈ
چین نے سکس(6) جی ٹیکنالوجی ٹیسٹ کرنے کیلئے سیارہ خلاءمیں بھیج دیا
ناساچاندپر4جی ٹاورزلگانے کیلئے نوکیاکی مددکرے گا

جاپان میں کوروناوائرس ختم کرنے والاآلہ تیار

2 months ago


قیمت 2 ہزار 860 ڈالر، صرف صحت کے ادارے آڈر دے سکتے ہیں

روشنی کے آلات کی جاپانی کمپنی اوشیو نے انسان کو نقصان پہنچائے بغیر کورونا وائرس کووِڈ19 کو ختم کرنے والی الٹرا وائلٹ شعاعیں پھیلانے والا آلہ تیار کرلیا۔

کولمبیا یونیورسٹی کے تعاون سے تیار کردہ کئیر222 نامی یہ آلہ 254 نینو میٹر لہروں والی UV شعاعیں پھیلانے والے روایتی آلات کے برعکس 222 نینو میٹر UV شعاعیں پھیلاتا ہے۔انسان کو نقصان پہنچائے بغیر جراثیم کو مارنے والا یہ آلہ رش والی بسوں، ٹرینوں، لفٹوں اور آفسوں کو جراثیم سے پاک کرنے کے لئے استعمال کیا جائے گا۔
ٹی آرٹی کے مطابق کئیر 222 نامی یہ آلہ مطلوبہ جگہ کی چھت سے لٹکایا جاتا ہے اور اڑھائی میٹر تک کے فاصلے پر ہوا میں موجود جراثیم کو 7 منٹ کے اندر 99 فیصد تک ختم کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔کویوڈو خبر رساں ایجنسی کے مطابق 222 نینو میٹر UV شعاعوں کے انسانی صحت کے لئے م±ضر نہ ہونے کی غیر جانبدارانہ ٹیسٹ کے ساتھ ہیروشیما یونیورسٹی کی طرف سے تصدیق کی گئی ہے۔
3 لاکھ ین تقریباً 2 ہزار 860 ڈالر کے اور 1.2 کلوگرام وزنی کئیر 222 آلے کے لئے فی الحال صرف صحت کے اداروں کی طرف سے آڈر وصول کئے جا رہے ہیں۔



پاکستان میں کورونا سے بچائو کی ویکسن کی آزمائش شروع

2 months ago


آزمائشی مرحلے میں8 سے 10 ہزار پاکستانی ہوں گے،وفاقی وزیراسدعمر

پاکستان میں کورونا سے بچائو کی ویکسن کی آزمائش شروع ہو گئی ہے۔وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر فیصل سلطان نے اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ ویکسن کا کلینکل ٹرائل صحت کے نظام میں بہتری کے لئے بھی اہم ہے۔انہوںنے بتایا کہ ویکسین کا کلینکل ٹرائل چین کے تعاون سے شروع کیا گیاہے، دوسرے مرحلے میں 508 افراد پر ٹرائل کیا گیا۔ تیسرے مرحلے میں 8 سے 10 ہزار افراد پر ویکسن کا ٹرائل ہو گا۔

وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی اسد عمر نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ پاکستان میں کورونا ویکسین کے تیسرے مرحلے کا آزمائشی آغاز ہو گیا ہے۔ کورونا ویکسین چینی کمپنی نے تیار کی ہے، ویکسین ٹرائل میں 7 ممالک کے 40 ہزار افراد رضاکارانہ شریک ہوں گے۔انہوں نے کہا کہ آزمائشی مرحلے میں 8 سے 10 ہزار پاکستانی ہوں گے، ٹیسٹ کے ابتدائی نتائج 4 سے 6 ماہ میں متوقع ہیں۔



1939میں چھٹی کے لئے لکھی گئی درخواست برآمد

2 months ago


طالبعلم کانام راج سنگھ،تعلق سرگودھاسے تھا

سرگودھاکی تحصیل ساہی وال میں ایک گھرکی مرمت کے دوران 80سال پرانی ہاتھ سے لکھی گئی درخواست نکل آئی۔درخواست چھٹی جماعت کے طالبعلم را ج سنگھ کی طرف سے لکھی گئی ہے جس میں بیماری کی وجہ سے رخصت مانگی گئی ہے۔

مذکورہ تاریخی مکان کوحالیہ بارشوں کی وجہ سے کافی نقصان پہنچاتھااورمکان کی دیوارکاایک حصہ گر گیا تھا ۔ دیوارکی دوبارہ تعمیرکے لئے جب کام آغازکیاگیاتواس میں سے ایک صفحہ برآمدہواجس پر چھٹی کے لئے درخواست لکھی ہوئی تھی۔درخواست اس وقت کے ہیڈماسٹرگورنمنٹ ہائی سکول کے نام لکھی گئی تھی جس پر29جون1939کی تاریخ درج ہے۔